Above the law By Javed Chaudhry

میری طالب علمی کے دو سال گجرات میں گزرے۔وہ جنرل ضیاءالحق کا دور تھا‘ حکومتی اختیارات عسکری حکمرانوں کے پاس تھے‘ ہر ضلع میں ایک نامعلوم افسر ہوتا تھا‘ وہ افسر کسی بھی وقت کسی بھی حکومتی حکم کو تبدیل کر سکتا تھا اور کوئی اسے روک نہیں سکتا تھا‘ گجرات میں درجن بھر سینما

Aur Aap Ye Be Pallay Bandh Lein By Javed Chaudhry

آپ یہ بھی پلے باندھ لیں ہماری اضافی دولت ہمیشہ ڈاکوؤں کا رزق بنتی ہے‘ ہم نے دولت کمائی‘ ہم نے ضرورت کے مطابق پیسہ استعمال کرلیا‘ ہمارے اکاؤنٹ میں جو بچ گیا وہ جلد یا بدیر کوئی نہ کوئی ڈاکو لے اڑے گا‘ ہم پر پہلا ڈاکہ ہمارے عزیز‘رشتے دار اور دوست ماریں گے‘

Hum uth kar baith jayenge By Javed Chaudhry

نعیم بٹ سابق اداکار ہیں‘ یہ سو سے زائد تھیٹرز اور ٹیلی ویژن ڈراموں میں کام کر چکے ہیں‘ یہ 1995ءمیں جب مقبولیت کی ”پیک“ پر تھے تو تبلیغی جماعت ان سے ٹکرائی اور انہیں شوبز سے مسجد میں لے گئی‘ نعیم بٹ نے اداکاری چھوڑ دی‘ داڑھی رکھی‘ دین کی تعلیم حاصل کی‘ اللہ

Khuda k leay By Javed Chaudhry

الطاف گوہر ملک کے نامور بیورو کریٹ‘ دانشوراور مصنف تھے‘ وہ ملک کے مختلف حصوں میں ڈپٹی کمشنر اورکمشنر بھی رہے اور صدر ایوب خان کے دورمیں فیڈرل انفارمیشن سیکرٹری بھی ‘ وہ جنرل یحییٰ خان کے دور میں نوکری سے برخاست کر دیئے گئے‘ صحافت جوائن کی‘ لندن سے تھرڈورلڈ ریویواور ساﺅتھ میگزین نکالا

Phalsfa e insaf ka bayan By Sadullah Jan Barq

آج ہم نے ٹھان لی ہے کہ فلسفہ بگھاریں گے اور اتنا بگھاریں گے کہ بگھارتے بگھارتے ساری دنیا کیکڑاہی بگھار بن جائے۔ ٹھیک ہے ہم ڈبل ڈور یا ٹو ان ون یعنی کالم نگار +دانشور نہیں ہیں لیکن اتنے بھی پھسڈی نہیں کہ دانش یا فلسفے کی نقل یا مینکر ی بھی نہ کر